Home / Pakistan / کلبھوشن یادیو کیس ، عالمی عدالت انصاف نے 6 ماہ کا وقت دینے کی بھارتی اپیل رد کردی

کلبھوشن یادیو کیس ، عالمی عدالت انصاف نے 6 ماہ کا وقت دینے کی بھارتی اپیل رد کردی

ہیگ : دہشتگرد کلبھوشن یادیو کے معاملے پر عالمی عدالت انصاف نے چھ ماہ کا وقت دینے کی بھارتی اپیل رد کردی، عویٰ دائر کرنے کیلئے رواں سال تیرہ ستمبر تک مہلت دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کیس میں عالمی عدالت انصاف نے بھارت کی کلبھوشن کے حوالے سے دعوی داخل کرنے کے لیے چھ ماہ کا وقت دینے کی درخواست مسترد کردی، دعویٰ دائر کرنے کیلیے بھارت کو ٹائم لائن دیدی گئی ہے۔

عالمی عدالت انصاف نے بھارت کو دعویٰ دائر کرنے کیلئے رواں سال تیرہ ستمبر تک مہلت دی ہے اور اس پر جوابی دعویٰ دائر کرنے کیلیے پاکستان کو تیرہ دسمبر تک مہلت دی گئی ہے ۔

رجسٹرار عالمی عدالت انصاف نے حکومت پاکستان کو باضابطہ طور پر آگاہ بھی کردیا ہے۔

اٹارنی جنرل اشتر اوصاف کے مطابق بھارت نے کلبھوشن کے حوالے سے دعوی داخل کرنے کے لیے دسمبر تک کا وقت مانگا تھا، بھارت کا موقف تھا کہ یہ زندگی اور موت کا معاملہ ہے اس لیے تمام امور کی انجام دہی کے لیے چھ ماہ کا وقت دیا جائے۔

کلبھوشن کیس کی سماعت آئی سی جے میں اب جنوری 2018 میں ہونے کا امکان ہے۔

یاد رہے رواں ماہ کے آغاز میں عالمی عدالت انصاف کے سربراہ سے پاکستان اور بھارت کے وفد کی ملاقات ہوئی تھی، جس میں ٹائم لائن پر مشاورت کی گئی اور جوابی دلائل جمع کروانے کے لیے ٹائم لائن طے کی گئی۔

پاکستان کی جانب سے کلبھوشن کیس کی سماعت کے لیے آئی سی جے جانے والے اٹارنی جنرل نے عالمی عدالتِ انصاف کے سربراہ پر واضح کیا کہ کلبھوشن کیس کی سماعت آئی سی جے کے دائرہ اختیار میں نہیں ہے۔

اٹارنی جنرل آفس نے کہا کہ عالمی عدالت نے ابھی طریقہ کار سے متعلق کوئی فیصلہ نہیں دیا اور نہ ہی عدالتی میرٹ پر کوئی فیصلہ کیا گیا، آئی سی جے کے سربراہ نے کلبھوشن کیس کی سماعت دوبارہ کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی۔

یاد رہے کہ عالمی عدالتِ انصاف نے کلبھوشن کیس میں اپنا فیصلہ سناتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان بھارت کو کلبھوشن تک قونصلر رسائی دے‘ اور امید ہے کہ پاکستان عالمی عدالت کا مکمل فیصلہ آنے تک کلبھوشن کو سزا نہیں دی جائے گی۔

پاکستان نے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کیس میں عالمی عدالت انصاف کا دائرہ اختیار اور کیس کے میرٹ کو چیلنج کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

جس کے بعد حکومت نے کلبھوشن یادیو کیس میں تیاری نامکمل ہونے کا اعتراف کیا تھا، مشیر خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ کلبھوشن کیس کی تیاری ٹھیک سے نہیں کی گئی،کیس کی تیاری کے لیے زیادہ وقت نہیں ملا تھا۔

خیال رہے کلبھوشن کیس کے معاملے پر بھارت نے عالمی عدالت انصاف میں درخواست دائر کی تھی جس میں استدعا کی گئی تھی کہ ’’پاکستان کی جانب سے کلبھوشن کو قونصلر رسائی دی جائے اور حتمی فیصلہ ہونے تک پھانسی کی سزا مؤخر کی جائے۔

واضح رہے کہ کلبھوشن جادیو کو 10 اپریل کو سزائے موت سنائی گئی تھی۔

Check Also

یوم عاشور پر شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد

یوم عاشور پر شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد

یوم عاشور کے سلسلے میں شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد …

Translate »