Connect with:

"خبر کی دوڑ میں سب سے آگے"

Translate:
Friday / August 18, 2017 4:21 AM
HomePakistanنیب نے بطور گواہ طلب کیا، مصطفیٰ کمال

نیب نے بطور گواہ طلب کیا، مصطفیٰ کمال

!نیب نے بطور گواہ طلب کیا، مصطفیٰ کمال

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصظفیٰ کمال نے کہا ہے کہ ہم نے شہریوں کے لیے حقوق مانگے اور 16 نکات پیش کیے تو نیب کے لیٹر موصول ہوئے، قومی احتساب بیورو نے ملزم نہیں گواہ کے طور پر طلب کیا۔

نیب دفتر کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال نے کہا کہ کم علمی اور نادانستہ طور پر را ایجنٹ کے ساتھ کام کررہا ہے، جس وقت میں سینیٹر تھا تو میرے ساتھ تین موبائلیں چلتی تھیں مگر میں نے صحیح راستے کا انتخاب کرتے ہوئے مراعات کو ٹھکرا دیا۔

پی ایس پی سربراہ نے کہا کہ اللہ نے دماغ میں ڈالا تو ملک واپس آنے کا فیصلہ کیا، ہماری واپسی پر را ایجنٹ(بانی ایم کیو ایم) کی سیاسی موت ہوگئی، جب تک را ایجنٹ کے ساتھ تھا نیب کا کوئی مقدمہ نہیں بنا مگر اب گیارہ سال پرانے مقدمے میں پوچھ گچھ کے لیے طلب کیا گیا۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ہم نے شہریوں کے لیے حقوق مانگے، 24 اپریل کو دھرنا ختم کیا تو دو روز بعد ہی نیب کا خط موصول ہوا اور 14 مئی کو 16 نکاتی مطالبات لے کر سڑک پر نکلے تو 15 مئی کو دوسرا خط موصول ہوا۔

پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ نے کہا کہ عوام کے لیے پانی ، بجلی اور صحت کا مطالبہ کرنا فساد کی جڑ ہے، ڈی جی نیب اور ڈائریکٹر کو 16 نکاتی پرچہ تھما کر بتا دیا کہ اس وجہ سے طلب کیا گیا۔ مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ اللہ کا شکر ہے کبھی غلطی سے بھی کوئی غلط کام نہیں کیا اس لیے نیب نے گواہ کے طور پر معلومات حاصل کرنے کے لیے طلب کیا۔

سربراہ پی ایس پی نے ایم کیو ایم پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ متحدہ 30 سال سے کراچی کی چوکیدار تھی، شہر کو لوٹنے والا کوئی اور نہیں بلکہ اس کے اپنے چوکیدار ہی ہیں، سینیٹرز، قومی اور صوبائی اسمبلی کے ممبران ہونے کے باوجود حقوق ریلی نکالی جارہی ہے۔

Share

No comments

Sorry, the comment form is closed at this time.