Connect with:

"خبر کی دوڑ میں سب سے آگے"

Translate:
Thursday / August 17, 2017 12:48 PM
HomePakistanسابق وزیراعظم نوازشریف کا قافلہ جی ٹی روڈ کے ذریعے اسلام آباد سے لاہور کے لیے روانہ

سابق وزیراعظم نوازشریف کا قافلہ جی ٹی روڈ کے ذریعے اسلام آباد سے لاہور کے لیے روانہ

سابق وزیراعظم نوازشریف کا قافلہ جی ٹی روڈ کے ذریعے اسلام آباد سے لاہور کے لیے روانہ

اسلام آباد : سابق وزیراعظم نوازشریف کا قافلہ جی ٹی روڈ کے ذریعے اسلام آباد سے لاہور کے لیےروانہ ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق ناااہلی کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف کا قافلہ اسلام آباد سے لاہور کےلیے روانہ ہوگیا۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، اسحاق ڈار، اور دیگر وزرا نے نواز شریف کے قافلے کو الوداع کیا۔
سابق وزیراعظم نوازشریف کا قافلہ خیبر پلازہ پہنچ گیا، ان کی گاڑی سابق وزیرداخلہ چوہدری نثارڈرائیو کررہےہیں جبکہ کارکنان کی بڑی تعداد ریلی میں موجود ہے۔
اسلام آباد سے روانگی سے قبل پنجاب ہاؤس میں مشاورتی اجلاس ہوا جس میں شاہد خاقان عباسی نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں مسلم لیگ ن کی قیادت نے ریلی کے روٹ کے حوالے سے مشاورت کی۔
نواز شریف کی قیادت میں ریلی مارگلہ روڈ اور ایمبیسی روڈ سے ہوتے ہوئے ایکسپریس چوک پر آئے گی جہاں پرنوازشریف کارکنان سے خطاب کریں گے۔
ایکسپریس چوک سے روانگی کے بعد نوازشریف کو مجاہد پلازہ بلیو ایریا، فیصل چوک، زیرو پوائنٹ، آئی ایٹ اور فیض آباد استقبالیہ دیاجائےگا، جس کے بعد ریلی مری روڈ پرفیض آباد، شمس آباد، رحمان آباد، چاندنی چوک، ناز سینما، کمیٹی چوک اور لیاقت باغ سے گزرے گی۔
سابق وزیراعظم نوازشریف کی ریلی فیض آباد، شمس آباد اور کچہری چوک، جی ٹی روڈ سے مندرہ، گجر خان، سہاوا اور دینہ سے گزرتی ہوئی جہلم پہنچےگی، جہاں نواز شریف کارکنوں سے خطاب کریں گے اوررات قیام کریں گے۔
دوسرے دن نوازشریف گوجرانوالہ میں قیام کریں گے جس کے لیےتمام انتظامات مکمل کرلیے گئے ہیں جبکہ تیسرے دن سابق وزیراعظم گوجرانوالہ سے لاہور کےلیےنکلیں گے۔
ٹریفک پلان کے مطابق نواز شریف کی ریلی کے دوران کم سے کم 600 ٹریفک پولیس اہلکار جن میں ایس ایس پی، ایس پی ٹریفک، چار ڈی ایس پیز اور 23 انسپیکٹرز تعینات ہوں گے۔
جناح ایونیو ایکسپریس چوک سے ایف ایٹ ایکسچینج اور فیصل چوک سے کھنہ پل تک ایکسپریس ہائی وے ٹریفک کے لیے بند رہے گی۔
اسلام آباد پولیس کے مطابق پنجاب ہاؤس اسلام آباد سے فیض آباد تک پولیس کے 2500 اہلکار ریلی کے شرکا کو سیکورٹی فراہم کریں گے جبکہ 1200 پولیس اہلکار نواز شریف کی سیکورٹی پر تعینات ہوں گے۔
ٹریفک پولیس کے مطابق راول ڈیم چوک سے فیض آباد تک مری روڈ ٹریفک کے لیے بند ہو گی جبکہ اسلام آباد اور راولپنڈی کے درمیان چلنے والی میٹرو بس سروس بھی بند رہے گی۔
خیال رہے کہ گزشتہ شب میڈیا سے بات کرتے ہوئےمسلم لیگ ن کےسینیٹر آصف کرمانی کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ نواز کے کارکن نواز شریف کا استقبال کرنے کے لیے بے چین ہیں۔
انہوں نے کہا تھا کہ نواز شریف کے پروگرام میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے اور پاکستان کے عوام خود انھیں سیکورٹی فراہم کریں گے۔
یاد رہے کہ نواز شریف نے وزیراعظم کے عہدے سے معزولی کے بعد بدھ کو لاہور جانے کے پروگرام میں تبدیلی کرتے ہوئے موٹروے کے بجائے جی ٹی روڈ کے ذریعے لاہور جانے کا اعلان کیا تھا۔
اس سے قبل طے شدہ شیڈول کے مطابق سابق وزیراعظم نے اتوار کو موٹروے کے ذریعے لاہور پہنچنا تھا۔
واضح رہے کہ گزشتہ ماہ 28 جولائی کو سپریم کورٹ نے پاناما کیس کے حوالے سے جے آئی ٹی کی رپورٹ پر سماعت کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو بطور وزیراعظم نااہل قرار دے دیا تھا۔

 

Share

No comments

Sorry, the comment form is closed at this time.