Home / Pakistan / جنگ گروپ کیس: عدالت کو جان بوجھ کر بدنام کیا گیا ہے، عدالتی ریمارکس

جنگ گروپ کیس: عدالت کو جان بوجھ کر بدنام کیا گیا ہے، عدالتی ریمارکس

اسلام آباد : سپریم کورٹ میں جنگ گروپ کے خلاف غلط رپورٹنگ کیس کی سماعت میں عدالتی ریمارکس میں کہا گیا ہے کہ عدالت کو جان بوجھ کر بدنام کیا گیا، آپ کے اخبار میں جے آئی ٹی سے متعلق خبر باؤنس ہوئی، اگلے دن آپ کو معافی مانگنا پڑ گئی۔

سپریم کورٹ آف پاکستان میں جنگ گروپ کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی، ججز نے ریمارکس دیئے کہ جنگ گروپ کی جانب سے غلط رپورٹنگ کی جا رہی ہے، عوام میں عدالتی احکامات سے متعلق غلط فہمیاں پیدا کی جا رہی ہیں، جان بوجھ کر جے آئی ٹی اور عدالت کو بدنام کرنے کی کوشش کی گئی، کیچڑ اچھالنے کی اجازت نہیں دیں گے۔
جنگ گروپ کے خلاف توہین عدالت کیس میں میر شکیل الرحمٰن اور دیگر سپریم کورٹ میں پیش ہوئے، جنگ گروپ کے وکیل نے بتایا تحریری جواب جمع کرا دیا ہے، عدالت کا استفسار کیا کہ یہ کیا جواب جمع کرایا ہے؟؟۔
جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ جنگ گروپ کی جانب سے غلط رپورٹنگ کی جا رہی ہے، ذرائع سے عدالت کے غلط احکامات چلائے جا رہے ہیں، ایسی خبریں عوام میں کنفیوزن پیدا کر رہی ہیں، جے آئی ٹی اور عدالت کو بدنام کرنے کی کوشش کی گئی، تنقید برداشت کرتے ہیں اور کرتے رہیں گے لیکن کیچٹر اچھالنے کی اجازت کسی صورت نہیں دیں گے۔
جسٹس اعجاز افضل نے کہا کہ جان بوجھ کر عدالت کو جان بدنام کیا گیا، جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیئے کہ جنگ گروپ نے جے آئی ٹی رپورٹ آنے سے پہلےغلط خبر شائع کی،خبر نہ صرف باؤنس ہوئی بلکی پوری طرح باؤنس ہوئی۔
میر شکیل الرحمان نے غلط خبر کی اشاعت کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے ریمارکس سے تکلیف ہوتی ہے، اِس پر جسٹس شیخ عظمت بولے معاملہ جب برداشت سے باہر ہو جائے تو آپ کو بلانا پڑتا ہے، عدالت نے قرار دیا کہ اپنے جواب سے متعلق مزید دستاویزات جمع کرانا چاہتے ہیں تو کرا دیں، کیس کی اگلی سماعت 22 اگست کو ہوگی۔

Check Also

یوم عاشور پر شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد

یوم عاشور پر شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد

یوم عاشور کے سلسلے میں شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد …

Translate »