Home / Pakistan / بادی النظر میں نہال ہاشمی نے توہین عدالت کی،سپریم کورٹ

بادی النظر میں نہال ہاشمی نے توہین عدالت کی،سپریم کورٹ

اسلام آباد : جے آئی ٹی کو دھمکیاں دینے کے معاملے پر سپریم کورٹ آف پاکستان میں ن لیگی رہنما نہال ہاشمی کیخلاف ازخود نوٹس کی سماعت جاری ہے، سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ بادی النظر میں نہال ہاشمی نے توہین عدالت کی، جس پر نہال ہاشمی کے وکیل کا کہنا تھا کہ نہال ہاشمی نے کسی کو دھمکیاں نہیں دیں۔

اسلام آباد : عدالت عظمیٰ میں سینیٹر نہال ہاشمی کے خلاف نہال ہاشمی کیس کی سماعت جاری ہے، جہاں نہال ہاشمی کے وکیل اپنے موکل کے حق میں دلائل دے رہے ہیں۔
پاناما عمل درآمد کیس کی سماعت کرنے والے جسٹس اعجاز افضل خان کی سربراہی میں جسٹس شیخ عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الحسن پر مشتمل تین رکنی خصوصی بینچ کیس نہال ہاشمی کے خلاف ازخود نوٹس کیس کی سماعت کر رہا ہے۔
سماعت کے آغاز پر نہال ہاشمی کے وکیل نے سپریم کورٹ میں نئی درخواست جمع کروادی، وکیل نے نئی میں مؤقف اختیار کرتے ہوئے کہا ہے کہ نہال ہاشمی کو بیماری کے باعث عدالت سے مزید وقت
درکار ہے، وکیل کی جانب سے استدعا کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ علاج کیلئے مزید وقت دیا جائے۔
وکیل کا کہنا تھا کہ اٹارنی جنرل نے سی ڈیز فراہم کی ہیں، سی ڈیز کے ساتھ متن نہیں، کیا پتا سی ڈیز میں کیا ہے، چارج شیٹ کا جواب دینے کیلئے وقت دیا جائے، اپنے حق میں گواہ بھی تلاش کرنا چاہتے
ہیں، اپنی درخواست میں پورا ٹرانسکرپٹ داخل کروایا ہے، جس پر جسٹس اعجاز کا کہنا تھا کہ جو متن آپ نے جمع کرایا ہے، اس کے علاوہ تو کچھ نہیں ہوسکتا سی ڈیزمیں۔
نہال ہاشمی نے کہا کہ عدالت کو بتانا چاہتے ہیں، کن حالات میں تقریر کی، اس پر جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ 27صفحات پر مشتمل جواب پہلے ہی آ چکا ہے، وکیل نے عمران خان پر تمام ملبہ ڈالتے
ہوئے کہا کہ عمران خان کی وجہ سے یہ سب ہوا ہے، جس پر جسٹس نے حیران ہو کر سوال کیا کہ عمران خان کا کیس سے کیا تعلق ہے؟۔
نہال ہاشمی کے وکیل نے کہا کہ سارا ڈرامہ عمران خان کا ہی تو ہے، ٹی وی چینلز کیخلاف بھی درخواست دی ہے، اس پر عدالت نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریماکس دیئے کہ “آپ نے کچھ نہیں کیا
چینلز نے خود ہی بنا کر چلا دیا”، وکیل نے کہا رجسٹرار نے کہیں نہیں لکھا کہ ججز کو دھمکیاں دیں۔
جسٹس اعجاز نے کہا کہ پورے پاکستان کو علم ہے کہ رجسٹرار نے نہیں بھی لکھا تو مسئلہ نہیں، وکیل نے پھر عمران خان کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کیخلاف آج تک توہین عدالت پر فرد جرم عائد نہیں ہوئی، عدالت نے کہا کہ عمران خان کا کیس ہمارے سامنے نہیں، وکیل کا کہنا تھا کہ عدالت کو کہا تھا کہ غلطی کی نشاہدہی پر معافی مانگ لیں گے، عدالت نے استفسار کرتے ہوئے پوچھا کیا آپ نے تقریر سوچے سمجھے بغیر کی تھی، جس پر وکیل نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ تحریری جواب کا موقع دیں، ہوسکتا ہے بات واضح ہوجائے، دفاع کے لیے لوگوں کو کراچی سے لانا ہے۔
عدالتی بینچ نے ریمارکس دیئے کہ شو کاز نوٹس پر اپنے جواب کی خامیاں بتائیں، خامیاں ہوئیں تو مزید جواب کی اجازت سے متعلق فیصلہ کرینگے، اپنے دفاع میں جو کہنا ہے کہیں، توہین عدالت کرتے ہیں پھر مہنگائی کا رونا روتے ہیں۔ بعد ازاں کیس کی سماعت اکیس اگست تک ملتوی کردی گئی۔

Check Also

یوم عاشور پر شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد

یوم عاشور پر شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد

یوم عاشور کے سلسلے میں شہر قائد میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد …

Translate »